پاکستان اور آذربائیجان کے درمیان ترجیحی تجارتی معاہدے پر بات چیت ہو رہی ہے، وزیراعظم

پاکستان اور آذربائیجان کے درمیان ترجیحی تجارتی معاہدے پر بات چیت ہو رہی ہے، وزیراعظم

وزیرِ اعظم شہباز شریف نے ا آذربائیجان کیساتھ اقتصادی و سرمایہ کاری کے شعبے میں تعاون و تجارتی شراکت داری کو مضبوط کرنے کے لیے ایک جامع لائحہ عمل تشکیل دینے کی ہدایت کی،وزیراعظم نے کہا کہ جغرافیائی لحاظ سے پاکستان وسط ایشیائی ریاستوں کے لیے سمندر تک اقتصادی راہداری کا قدرتی راستہ فراہم کرتا ہے. پاکستان اور آذربائیجان کے مابین تجارت و سرمایہ کاری کے وسیع مواقع موجود ہیں.آذربائیجان اور پاکستان کے درمیان تجارت کی استعداد اور موجودہ تجارت کو بڑھانے کے لیے جامع لائحہ عمل بنا کر پیش کیا جائے،

پاکستان اور ازربائیجان کے درمیان دیرینہ برادرانہ تعلقات ہیں جو دہائیوں پر محیط ہیں. حکومت کی کاروبار و سرمایہ کاری دوست پالیسیوں کی بدولت ملک میں غیر ملکی سرمایہ کاری میں اضافہ ہورہا ہے، وزیراعظم کو بریف کیا گیا کہ آذربائجان اور پاکستان کے مابین ترجیحی تجارتی معاہدے پر بات چیت ہو رہی ہے،آذربائیجان کے ساتھ توانائی کے شعبے میں تعاون کی وسیع استعداد موجود ہے،

تفصیلات کے مطابق وزیرِ اعظم محمد شہباز شریف کی زیرِ صدارت آزربائیجان کیساتھ اقتصادی و سرمایہ کاری کے شعبے میں تعلقات کے فروغ کے حوالے سے اعلی سطحی اجلاس آج اسلام آباد میں منعقد ہوا. اجلاس میں وزیر خارجہ محمد اسحاق ڈار، وفاقی وزراء ، جام کمال ،عبدالعلیم خان، احسن اقبال، رانا تنویر حسین ڈاکٹر مصدق ملک، سردار اویس خان لغاری، ، معاون خصوصی طارق فاطمی اور متعلقہ اعلی حکام نے شرکت کی. اجلاس میں شہبازشریف کو پاکستان اور آذربائیجان کے مابین تجارت کے حجم، استعداد اور تجارت و سرمایہ کاری میں اضافے کیلئے اقدامات سے آگاہ کیا گیا. شہباز شریف نے متعلقہ حکام کو اقتصادی تعاون کے فروغ اور سرمایہ کاری میں اضافے کیلئے جامع لائحہ عمل تشکیل دے کر پیش کرنے کی ہدایت کی.

اپنا تبصرہ لکھیں