واپڈا نے درگئی ہائیڈل پاور سٹیشن کی بحالی کیلئے کنٹریکٹ ایوارڈ کر دیا

واپڈا نے درگئی ہائیڈل پاور سٹیشن کی بحالی کیلئے کنٹریکٹ ایوارڈ کر دیا

واپڈا نے درگئی ہائیڈل پاور سٹیشن کے بحالی منصوبہ کے سول اور الیکٹرو مکینیکل ورکس کیلئے کنٹریکٹ ایوارڈ کر دیا، کنٹریکٹ کی مالیت دس ارب 60کروڑ روپے ہے، یہ کنٹریکٹ دو چینی اور ایک پاکستانی کمپنی پر مشتمل جوائنٹ ونچر کو ایوارڈکیا گیا ہے۔واپڈا سے جاری اعلامیہ کے مطابق جنرل منیجر (ہائیڈل) ڈویلپمنٹ واپڈا احسان اللہ اور جوائنٹ وینچر کے نمائندے نبیل طاہر نے کنٹریکٹ پر دستخط کئے۔ چیئرمین واپڈا انجینئر لیفٹیننٹ جنرل (ر)سجاد غنی ، ممبر(پاور) جمیل اختر، واپڈا کے آفیسرز، کنسلٹنٹس اور کنٹریکٹرز کے نمائندے بھی معاہدے پر دستخط کرنے کی تقریب میں موجود تھے۔ درگئی ہائیڈل پاور سٹیشن کی بحالی میں واپڈا کو اے ایف ڈی فرانس کی مالی معاونت حاصل ہے۔

کنٹریکٹ کے مطابق، درگئی ہائیڈل پاور سٹیشن کی بحالی کا کام تین سال میں مکمل ہوگا۔ بحالی منصوبے کی تکمیل پر درگئی ہائیڈل پاور سٹیشن 22میگاواٹ ماحول دوست پن بجلی پیدا کرے گا۔ اس پراجیکٹ سے نیشنل گرڈ کو ہر سال 13 کروڑ یونٹ کم لاگت بجلی مہیا ہوگی۔درگئی ہائیڈل پاور سٹیشن 1952میں مالا کنڈ میں تعمیر کیا گیا، 72سال گزرنے کے بعد پاور سٹیشن کا آپریشن جاری رکھنے کیلئے اس کی بحالی کی جارہی ہے۔واپڈا پاکستان میں پن بجلی کی زیادہ سے زیادہ پیداوار کے لئے دو جہتی حکمت عملی پر گامزن ہےجسکے تحت پن بجلی کے نئے منصوبے تعمیر کرنے کے ساتھ ساتھ پرانے پن بجلی گھروں کی بحالی اور اپ گریڈیشن بھی کی جارہی ہے۔ درگئی پن بجلی گھر کی بحالی بھی اِسی حکمت ِ عملی کا حصہ ہے۔

اپنا تبصرہ لکھیں