پٹرول 350 روپے لیٹر ہوگا؟

پٹرول 350 روپے لیٹر ہوگا؟

اسرائیل کی جانب سے آنے والے دنوں میں ایران کے خلاف کارروائیوں کے امکان کے نتیجے میں تیل اور گیس کی بین الاقوامی قیمتیں نئی بلندیوں پر پہنچ گئی ہیں۔ امریکی ڈبلیو ٹی آئی خام تیل کی قیمت 90 ڈالر 10 سینٹ، 85 ڈالر 37 سینٹس، ویسٹرن کینیڈین سلیکٹ آئل 72 ڈالر 62 سینٹس فی بیرل تک پہنچ گئی۔ آئندہ دو تین ماہ میں پاکستان کو مختلف مراحل میں مسلسل قیمتوں میں اضافہ کرنا پڑے گا اور پیٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں میں ساڑھے تین سو تک اضافہ ہوگا۔

روپے فی لیٹر تک شاید پاکستانی عوام کو دینا پڑے گا۔ دوسری جانب پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں حالیہ اضافے کی وجوہات پر ترجمان وزارت خزانہ کا اہم بیان سامنے آگیا۔ ترجمان وزارت خزانہ کا کہنا ہے کہ عالمی منڈی میں گزشتہ 15 روز کے دوران پیٹرول کی قیمت میں 3.82 ڈالر فی بیرل کا اضافہ ہوا، اسی طرح ہائی اسپیڈ ڈیزل کی قیمت میں 4.30 ڈالر فی بیرل کا اضافہ ہوا۔اوگرا نے پیٹرول کی قیمت میں 4 روپے 53 پیسے اور ہائی اسپیڈ ڈیزل کی قیمت میں 8 روپے 14 پیسے اضافے کی تجویز دے دی۔ دیا.

پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں عالمی منڈی میں قیمتوں کے اتار چڑھاو اور شرح مبادلہ پر منحصر ہوتی ہیں۔ مشرق وسطیٰ میں بھی عالمی منڈی میں غیر یقینی کی صورتحال کے باعث مسلسل تیسرے ماہ بجلی کے بلوں میں کمی کی درخواست نیپرا کو جمع کرادی گئی۔ پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ،امید ہے کہ مشرق وسطیٰ کے بحران کے خاتمے سے ریلیف ملے گا۔ واضح رہے کہ وفاقی حکومت نے آئندہ 15 روز کے لیے پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ کردیا ہے۔ پیٹرول کی فی لیٹر قیمت 293 روپے 94 پیسے ہوگئی۔ ڈیزل کی قیمت میں 8 روپے 14 پیسے فی لیٹر اضافہ ہوا ہے۔ ڈیزل کی قیمت 290 روپے 38 پیسے فی لیٹر ہوگئی۔ یہ 16 اپریل سے 30 اپریل تک ہو گا، نوٹیفکیشن جاری کر دیاگیا

دنیا کے مقبول ترین سیاحتی مقامات

مختلف شہروں میں بارش، متعدد ہلاکتیں ریکارڈ

اپنا تبصرہ لکھیں