درخت کیسے لگائیں اور ان کی حفاظت کیسے کریں؟

درخت کیسے لگائیں اور ان کی حفاظت کیسے کریں؟

ملک میں حالیہ گرمی کی شدت کی وجہ سے پاکستان کے ایک بڑے طبقے نے درختوں کی اہمیت کو محسوس کرنا شروع کر دیا .یہی وجہ ہے کہ سوشل میڈیا پر بھی درخت لگانے کے حوالے سے 1تحریک سی چل نکلی ہے. اور درخت لگانے کے حوالے سے طرح طرح کے نعروں سے فیس بک کی دیواریں سجی ہوئی ہیں.لیکن سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ اگر کوئی شخص درخت لگانا چاہتا ہے تو وہ کونسا درخت لگائے؟
یہ سوال اسی لیے بھی اہمیت کا حامل ہے کہ ملک کے شہروں میں ہر جگہ نظر آنے والے کونو کارپس کے درخت کو ماہرین ماحول دوست قرار نہیں دے رہے. اسی طرح سفیدے کے بارے میں بھی لوگوں کے ذہن میں بہت سے سوالات ہیں.
یہ مضمون اس تناظر میں اپنے قارئین کیلئے پیش کر رہا ہے تاکہ لوگ درخت لگانے کے حوالے سے رہنمائی حاصل کر سکیں.

رخت لگانے کا بہترین وقت کونسا ہے؟

پاکستان جیسے ملک میں درخت لگانے کا بہترین وقت فروری کا مہینہ ،مارچ اور اگست ستمبر کے مہینے ہیں.

درخت کیسے لگائیں اور انکی حفاظت کیسے کریں؟

اگر آپ سکول کالج یا پارک میں درخت لگا رہے ہیں تو درخت ایک قطار میں لگے گئیں اور انکا فاصلہ10 سے 15 فٹ ہونا چاہیے۔. پودا لگانے کے بعد اس کو پانی دیں پودا ہمیشہ صبح یا شام کے وقت لگائیں۔گھر میں لگاتے وقت دیوار سے دور لگائیں ۔دوپہرمیں نہ لگائیں اس سے پودا سوکھ جاتا ہے۔گڑھا نیچا رکھیں تاکہ وہ پانی سے بھر جائے .نرسری سے پودا لائیں ۔ زمین میں ڈیڑھ فٹ گہرا گڑھا کھودیں۔نرسری سے بھل ( اورگینک ریت مٹی سے بنی) لائیں گڑھے میں ڈالیں، پودا اگر کمزور ہے تو اس کیساتھ ایک چھڑی باندھ دیں ۔گرمیوں میں ایک دن چھوڑ کر جبکہ سردیوں میں ہفتے میں دو بار پانی دیتے رہیں۔۔.۔اگر پودا مرجھانے لگے تو گھر کی بنی ہوئی کھاد یا یوریا فاسفورس والی کھاد اس میں ڈالیں زیادہ کھاد سے بھی پودا سڑ سکتا ہے ۔لیکن بہت زیادہ نہیں ڈالنی چاہیے.. پودے کے گرد کوئی جڑی بوٹی نظر آئے تو اسکو کھرپے سے نکال دیں

جنوبی پنجاب کیلئے کون کونسے درخت موزوں ہیں؟

جنوبی پنجاب کی آب و ہوا زیادہ تر خشک ہے اس لیے یہاں خشک آب و ہوا کو برداشت کرنے والے درخت لگائے جانے چاہیے۔ خشکی پسند اور خشک سالی برداشت کرنے والے درختوں میں‌ ، ، کھجور، ون، بیری،کیکر، پھلائی ،فراش شریں، سوہانجنا جنڈ کے درخت قابل ذکر ہیں۔اس کیساتھ آم کا درخت بھی جنوبی پنجاب کی آب وہوا کیلئے بہت موزوں ہے۔

شمالی پنجاب کیلئے کون کونسے درخت موزوں ہیں؟

سفیدہ صرف وہاں لگائیں جہاں زمین خراب ہو یہ سیم و تھور ختم کرسکتاہے سفیدہ ایک دن میں 25 لیٹرپانی پیتا ہے۔لہذا جہاں زیرزمین پانی کم ہو اور فصلیں ہوں وہاں سفیدہ نہ لگائیں ۔شمالی پنجاب میں کچنار، پھلائی، کیل، اخروٹ، بادام، دیودار، اوک کے درخت لگائے جائیں ۔کھیت میں کم سایہ دار درخت لگائیں انکی جڑیں بڑی نہ ہوں اور وہ زیادہ پانی استعمال نہ کرتے ہوں ۔

اسلام آباد اور سطح مرتفع پوٹھوہار کیلئے کون کونسے درخت موزوں ہیں؟

خطہ پوٹھوہار کے لیے موزوں درخت بیری، دلو؛ پاپولر، کچنار، اور چنار ہیں ۔اور اسلام آباد میں زیتون کا درخت بھی یہاں لگایا جا سکتا ہے۔

سندھ کیلئے کون کونسے درخت موزوں ہیں؟

کراچی میں ایک بڑے پیمانے پر کونو کارپس کے درخت لگائے گئے ہیں۔ یہ درخت کراچی کی آب و ہوا سے ہرگز مطابقت نہیں رکھتے .کراچی میں املتاس، برنا، نیم، گلمہور،جامن، پیپل، بینیان، ناریل اور اشوکا لگایا جائے۔ سندھ کے ساحلی علاقوں میں پام ٹری اور کھجور لگانا چاہیے۔اندرون سندھ میں کیکر، بیری، پھلائی، ون، فراش، سہانجنا اور آسٹریلین کیکر لگاناچاہیے۔یہ درخت شہر میں پولن الرجی کا باعث بن رہے ہیں۔ یہ دوسرے درختوں کی افزائش پر بھی منفی اثر ڈالتے ہیں

بلوچستان کیلئے کون کونسے درخت موزوں ہیں؟

زیارت میں صنوبر کا قدیم جنگل بھی موجود ہے ،زیارت میں صنوبر کے درخت لگائے جانے چاہئیں ۔۔زیارت کے علاوہ دیگر بلوچستان خشک پہاڑی علاقہ ہے اس میں ون، کرک ،پھلائی، کیر، بڑ، چلغوزہ، پائن، اولیو اور ایکیکا لگایا جانا چاہیے۔

کے پی کے اور شمالی علاقہ جات کے لئے کون کون سے درخت موزوں ہیں؟

کے پی کے میں شیشم،دیودار، پاپولر،کیکر،ملبری،چنار اور پائن ٹری لگایا جائے.

اپنا تبصرہ لکھیں